کوئی ایسا کمال ہو جائے

ناہید ورک

کوئی ایسا کمال ہو جائے

ناہید ورک

MORE BYناہید ورک

    کوئی ایسا کمال ہو جائے

    ہجر سارا وصال ہو جائے

    ایک اک لمحہ تیری قربت کا

    زندگی کا جمال ہو جائے

    آیتوں کی طرح خیال ترا

    اترے اور مجھ پہ ڈھال ہو جائے

    باندھ لوں خود کو دھیان سے تیرے

    اور بچاؤ محال ہو جائے

    آنکھ بیداریوں میں کھو جائے

    رت جگوں کی مثال ہو جائے

    تیری خوشبو حد وجود میں ہو

    اور تکمیل حال ہو جائے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY