کوئی اٹکا ہوا ہے پل شاید

گلزار

کوئی اٹکا ہوا ہے پل شاید

گلزار

MORE BYگلزار

    کوئی اٹکا ہوا ہے پل شاید

    وقت میں پڑ گیا ہے بل شاید

    لب پہ آئی مری غزل شاید

    وہ اکیلے ہیں آج کل شاید

    دل اگر ہے تو درد بھی ہوگا

    اس کا کوئی نہیں ہے حل شاید

    جانتے ہیں ثواب رحم و کرم

    ان سے ہوتا نہیں عمل شاید

    آ رہی ہے جو چاپ قدموں کی

    کھل رہے ہیں کہیں کنول شاید

    راکھ کو بھی کرید کر دیکھو

    ابھی جلتا ہو کوئی پل شاید

    چاند ڈوبے تو چاند ہی نکلے

    آپ کے پاس ہوگا حل شاید

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    جگجیت سنگھ

    جگجیت سنگھ

    غلام علی

    غلام علی

    مآخذ:

    • کتاب : Chand Pukhraj Ka (Pg. 195)
    • Author : Gulzar
    • مطبع : Roopa And Company (1995)
    • اشاعت : 1995

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY