کوئی بھی ہم سفر نہیں ہوتا

فرحت کانپوری

کوئی بھی ہم سفر نہیں ہوتا

فرحت کانپوری

MORE BYفرحت کانپوری

    کوئی بھی ہم سفر نہیں ہوتا

    درد کیوں رات بھر نہیں ہوتا

    راہ دل خودبخود ہے مل جاتی

    کوئی بھی راہبر نہیں ہوتا

    آہ کا بھی نہ ذکر کر اے دل

    آہ میں بھی اثر نہیں ہوتا

    دل کو آسودگی بھی کیونکر ہو

    غم سے شیر و شکر نہیں ہوتا

    آہ اے بے خبر یہ بے خبری

    دل ناداں خبر نہیں ہوتا

    دل کی راہیں جدا ہیں دنیا سے

    کوئی بھی راہبر نہیں ہوتا

    اب تو محفل سے چل دیا فرحتؔ

    اب کسی کا گزر نہیں ہوتا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY