کوئی دعا نہ کوئی چارہ گر سنبھالے گا

عبدالسلام عاصم

کوئی دعا نہ کوئی چارہ گر سنبھالے گا

عبدالسلام عاصم

MORE BYعبدالسلام عاصم

    کوئی دعا نہ کوئی چارہ گر سنبھالے گا

    کہ اب یہ زخم ہی میرا جگر سنبھالے گا

    وہ عکس جس سے نہیں کوئی آئنہ محفوظ

    درون آب وہی چشم تر سنبھالے گا

    جو برقرار بہ نوع دگر ہے ٹوٹ کے بھی

    وہ سلسلہ ہی ہمیں عمر بھر سنبھالے گا

    وہ جس کی راہ میں گمراہ ہو گیا ہوں میں

    وہی خدا مرا سمت سفر سنبھالے گا

    خرد بنام جنوں قد کی آزمائش میں

    فراز دار و رسن میرا سر سنبھالے گا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY