کوئی سوغات وفا دے کے چلا جاؤں گا

مظفر رزمی

کوئی سوغات وفا دے کے چلا جاؤں گا

مظفر رزمی

MORE BYمظفر رزمی

    کوئی سوغات وفا دے کے چلا جاؤں گا

    تجھ کو جینے کی ادا دے کے چلا جاؤں گا

    میرے دامن میں اگر کچھ نہ رہے گا باقی

    اگلی نسلوں کو دعا دے کے چلا جاؤں گا

    تیری راہوں میں مرے بعد نہ جانے کیا ہو

    میں تو نقش کف پا دے کے چلا جاؤں گا

    میری آواز کو ترسے گا ترا رنگ محل

    میں تو اک بار صدا دے کے چلا جاؤں گا

    میرا ماحول رلاتا ہے مجھے آج مگر

    تم کو ہنسنے کی فضا دے کے چلا جاؤں گا

    باعث امن و محبت ہے اگر میرا لہو

    قطرہ قطرہ بخدا دے کے چلا جاؤں گا

    عمر بھر بخل کا احساس رلائے گا تمہیں

    میں تو سائل ہوں دعا دے کے چلا جاؤں گا

    میرے اجداد نے سونپی تھی جو مجھ کو رزمیؔ

    نسل نو کو وہ قبا دے کے چلا جاؤں گا

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    کوئی سوغات وفا دے کے چلا جاؤں گا نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY