کوئی شے دل کو بہلاتی نہیں ہے

بخش لائلپوری

کوئی شے دل کو بہلاتی نہیں ہے

بخش لائلپوری

MORE BYبخش لائلپوری

    کوئی شے دل کو بہلاتی نہیں ہے

    پریشانی کی رت جاتی نہیں ہے

    ہمارے خواب چوری ہو گئے ہیں

    ہمیں راتوں کو نیند آتی نہیں ہے

    کوئی تتلی کماں داروں کے ڈر سے

    فضا میں پنکھ پھیلاتی نہیں ہے

    ہر اک صورت ہمیں بھاتی نہیں ہے

    کوئی صورت ہمیں بھاتی نہیں ہے

    جس آزادی کے نغمے ہیں زباں پر

    وہ آزادی نظر آتی نہیں ہے

    بدن بے حرکت و بے حس پڑے ہیں

    لہو کی بوند گرماتی نہیں ہے

    مسلسل پوش کی چابک زنی سے

    مری آشفتگی جاتی نہیں ہے

    زوال فکر و فن کی بخشؔ تہمت

    جلال حرف پر آتی نہیں ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY