کچھ ایسا ہو گیا ہے یار اپنا

نعیم رضا بھٹی

کچھ ایسا ہو گیا ہے یار اپنا

نعیم رضا بھٹی

MORE BY نعیم رضا بھٹی

    کچھ ایسا ہو گیا ہے یار اپنا

    گلہ بنتا ہے اب بے کار اپنا

    پس پردہ بہت بے پردگی ہے

    بہت بیزار ہے کردار اپنا

    خرابے میں کسے اپنی خبر ہے

    اگرچہ کر لیا انکار اپنا

    در و دیوار سے جھڑتی ہے حیرت

    کہاں لے جاؤں میں آزار اپنا

    وفور نشۂ لغزش کے باعث

    ہوا ہے راستہ ہموار اپنا

    پتنگے گھیر لاتا ہوں کہیں سے

    دیے کی لو سے جو ہے پیار اپنا

    رضاؔ یہ پھول ہونے کی تمنا

    کسی کی سانس پر ہے بار اپنا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY