کچھ حسینوں کی محبت بھی بری ہوتی ہے

حسن بریلوی

کچھ حسینوں کی محبت بھی بری ہوتی ہے

حسن بریلوی

MORE BYحسن بریلوی

    کچھ حسینوں کی محبت بھی بری ہوتی ہے

    کچھ یہ بے چپن طبیعت بھی بری ہوتی ہے

    جیتے جی میرے نہ آئے تو نہ آئے اب آؤ

    کیا شہیدوں کی زیارت بھی بری ہوتی ہے

    آپ کی ضد نے مجھے اور پلائی حضرت

    شیخ جی اتنی نصیحت بھی بری ہوتی ہے

    اس نے دل مانگا تو انکار کا پہلو نہ ملا

    خانہ برباد مروت بھی بری ہوتی ہے

    اے حسنؔ آپ کہاں اور کہاں بزم شراب

    پیر و مرشد بری صحبت بھی بری ہوتی ہے

    مأخذ :
    • کتاب : Intekhab-e-Sukhan(Jild-2) (Pg. 136)
    • Author : Hasrat Mohani
    • مطبع : uttar pradesh urdu academy (1983)
    • اشاعت : 1983

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY