کچھ اس طرح سے وہ میرے نزدیک آ رہا تھا

طارق عثمانی

کچھ اس طرح سے وہ میرے نزدیک آ رہا تھا

طارق عثمانی

MORE BYطارق عثمانی

    کچھ اس طرح سے وہ میرے نزدیک آ رہا تھا

    دیے کی لو بجھ رہی تھی میں جلتا جا رہا تھا

    وہ رک گیا جب سبق کا عنوان عشق آیا

    جو زندگی کا نصاب مجھ کو پڑھا رہا تھا

    میں اب کے اندر سے کر رہا تھا بدن کو چھلنی

    سو بس تصور میں اس کا ماتم منا رہا تھا

    پھر ایک دن خون بن کے آنکھوں سے چیخ نکلی

    میں اپنی آواز جانے کب سے دبا رہا تھا

    میں اپنی آنکھوں سے سن رہا تھا وہ اک کہانی

    وہ اک کہانی جو اس کا چہرہ سنا رہا تھا

    میں اپنے چہروں سے خود بھی حیران سا ہوں طارقؔ

    وہ میرے اندر سے اتنے پردے اٹھا رہا تھا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے