کچھ خاک سے ہے کام کچھ اس خاک داں سے ہے

ذوالفقار عادل

کچھ خاک سے ہے کام کچھ اس خاک داں سے ہے

ذوالفقار عادل

MORE BYذوالفقار عادل

    کچھ خاک سے ہے کام کچھ اس خاک داں سے ہے

    جانا ہے دور اور گزرنا یہاں سے ہے

    دل اپنی رائیگانی سے زندہ ہے اب تلک

    آباد یہ جہاں بھی غبار جہاں سے ہے

    بس خاک پڑ گئی ہے بدن پر زمین کی

    ورنہ مشابہت تو مری آسماں سے ہے

    دل بھی یہی ہے وقت بھی منظر بھی نیند بھی

    جانا کہاں ہے خواب میں جانا کہاں سے ہے

    اک داستاں قدیم ہے اک داستاں دراز

    ہے شام جس کا نام وہ کس داستاں سے ہے

    وابستہ میز پوش کے پھولوں کی زندگی

    مہمان سے ہے میز سے ہے میزباں سے ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY