کوچۂ یار عین کاسی ہے

ولی محمد ولی

کوچۂ یار عین کاسی ہے

ولی محمد ولی

MORE BYولی محمد ولی

    کوچۂ یار عین کاسی ہے

    جوگئی دل وہاں کا باسی ہے

    پی کے بیراگ کی اداسی سوں

    دل پہ میرے سدا اداسی ہے

    اے صنم تجھ جبیں اپر یہ خال

    ہندوی ہر دوار باسی ہے

    زلف تیری ہے موج جمنا کی

    تل نزک اس کے جیوں سناسی ہے

    گھر ترا ہے یہ رشک دیول چیں

    اس میں مدت سوں دل اپاسی ہے

    یہ سیہ زلف تجھ زنخداں پر

    ناگنی جیوں کنوے پہ پیاسی ہے

    طاس خورشید غرق ہے جب سوں

    بر میں تیرے لباس تاسی ہے

    جس کی گفتار میں نہیں ہے مزا

    سخن اس کا طعام باسی ہے

    اے ولیؔ جو لباس تن پہ رکھا

    عاشقاں کے نزک لباسی ہے

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY