کیا ایسے کم سخن سے کوئی گفتگو کرے

احمد فراز

کیا ایسے کم سخن سے کوئی گفتگو کرے

احمد فراز

MORE BY احمد فراز

    کیا ایسے کم سخن سے کوئی گفتگو کرے

    جو مستقل سکوت سے دل کو لہو کرے

    اب تو ہمیں بھی ترک مراسم کا دکھ نہیں

    پر دل یہ چاہتا ہے کہ آغاز تو کرے

    تیرے بغیر بھی تو غنیمت ہے زندگی

    خود کو گنوا کے کون تری جستجو کرے

    اب تو یہ آرزو ہے کہ وہ زخم کھائیے

    تا زندگی یہ دل نہ کوئی آرزو کرے

    تجھ کو بھلا کے دل ہے وہ شرمندۂ نظر

    اب کوئی حادثہ ہی ترے روبرو کرے

    چپ چاپ اپنی آگ میں جلتے رہو فرازؔ

    دنیا تو عرض حال سے بے آبرو کرے

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    رنا لیلیٰ

    رنا لیلیٰ

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    کیا ایسے کم سخن سے کوئی گفتگو کرے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY