aaj ik aur baras biit gayā us ke baġhair

jis ke hote hue hote the zamāne mere

رد کریں ڈاؤن لوڈ شعر

کیا عجب فرط خوشی سے ہے جو گریاں آدمی

جنید حزیں لاری

کیا عجب فرط خوشی سے ہے جو گریاں آدمی

جنید حزیں لاری

MORE BYجنید حزیں لاری

    کیا عجب فرط خوشی سے ہے جو گریاں آدمی

    کثرت غم میں نظر آتا ہے خنداں آدمی

    قطرۂ بے مایہ لیکن بحر نا پیدا کنار

    ذرۂ ناچیز وسعت میں بیاباں آدمی

    پر سکوں حالات میں خاموش ساحل کی طرح

    شورش جذبات میں مانند طوفاں آدمی

    اس کی وحشت کا مداوا کر نہیں سکتا کوئی

    خود اگر چاہے تو بن سکتا ہے انساں آدمی

    آدمیت اگلے وقتوں میں تھی اک انمول شے

    آج کے حالات میں ہے جنس ارزاں آدمی

    زندگی کی سخت راہوں کا سفر درپیش ہے

    کارواں در کارواں ہے پا بجولاں آدمی

    اپنے زخموں کا مداوا غیر ممکن تو نہیں

    اے حزیںؔ سارے دکھوں کا خود ہے درماں آدمی

    مأخذ:

    Rooh-e-Ghazal,Pachas Sala Intekhab (Pg. 608)

      • اشاعت: 1993
      • ناشر: انجمن روح ادب، الہ آباد
      • سن اشاعت: 1993

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 8-9-10 December 2023 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate - New Delhi

    GET YOUR PASS
    بولیے