کیا تماشا دیکھیے تحصیل لا حاصل میں ہے

سرور عالم راز

کیا تماشا دیکھیے تحصیل لا حاصل میں ہے

سرور عالم راز

MORE BYسرور عالم راز

    کیا تماشا دیکھیے تحصیل لا حاصل میں ہے

    ایک دنیا کا مزا دنیائے آب و گل میں ہے

    دیکھ یہ جذب محبت کا کرشمہ تو نہیں

    کل جو تیرے دل میں تھا وہ آج میرے دل میں ہے

    میں بھلا کس سے کہوں کیا کیا کہوں کیسے کہوں

    موت سے پہلے ہی مر جانے کی خواہش دل میں ہے

    موج و شورش انقلاب و اضطراب و رست و خیز

    ہے مزا ساحل میں کب جو دورئ ساحل میں ہے

    جھانک کر دل میں ذرا یہ تو بتا دیجے حضور

    میری قسمت کا ستارہ کون سی منزل میں ہے

    مجھ کو بھاتا ہی نہیں اک آنکھ حسن کائنات

    ہاں مگر وہ جو ترے رخسار کے اک تل میں ہے

    کر دیا بیگانۂ غم ہائے دنیا عشق نے

    مجھ کو آسانی یہی تو اپنی اس مشکل میں ہے

    تیرا ماضی حال سے دست و گریباں گر رہا

    میں بتاتا ہوں جو سرورؔ تیرے مستقبل میں ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY