کیا یاد کر کے روؤں کہ کیسا شباب تھا

لالہ مادھو رام جوہر

کیا یاد کر کے روؤں کہ کیسا شباب تھا

لالہ مادھو رام جوہر

MORE BYلالہ مادھو رام جوہر

    کیا یاد کر کے روؤں کہ کیسا شباب تھا

    کچھ بھی نہ تھا ہوا تھی کہانی تھی خواب تھا

    اب عطر بھی ملو تو تکلف کی بو کہاں

    وہ دن ہوا ہوئے جو پسینہ گلاب تھا

    محمل نشیں جب آپ تھے لیلیٰ کے بھیس میں

    مجنوں کے بھیس میں کوئی خانہ خراب تھا

    تیرا قصوروار خدا کا گناہ گار

    جو کچھ کہ تھا یہی دل خانہ خراب تھا

    ذرہ سمجھ کے یوں نہ ملا مجھ کو خاک میں

    اے آسمان میں بھی کبھی آفتاب تھا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY