لائی پھر ایک لغزش مستانہ تیرے شہر میں

کیفی اعظمی

لائی پھر ایک لغزش مستانہ تیرے شہر میں

کیفی اعظمی

MORE BY کیفی اعظمی

    لائی پھر اک لغزش مستانہ تیرے شہر میں

    پھر بنیں گی مسجدیں مے خانہ تیرے شہر میں

    آج پھر ٹوٹیں گی تیرے گھر کی نازک کھڑکیاں

    آج پھر دیکھا گیا دیوانہ تیرے شہر میں

    جرم ہے تیری گلی سے سر جھکا کر لوٹنا

    کفر ہے پتھراؤ سے گھبرانا تیرے شہر میں

    شاہ نامے لکھے ہیں کھنڈرات کی ہر اینٹ پر

    ہر جگہ ہے دفن اک افسانہ تیرے شہر میں

    کچھ کنیزیں جو حریم ناز میں ہیں باریاب

    مانگتی ہیں جان و دل نذرانہ تیرے شہر میں

    ننگی سڑکوں پر بھٹک کر دیکھ جب مرتی ہے رات

    رینگتا ہے ہر طرف ویرانہ تیرے شہر میں

    RECITATIONS

    کیفی اعظمی

    کیفی اعظمی

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    کیفی اعظمی

    لائی پھر ایک لغزش مستانہ تیرے شہر میں کیفی اعظمی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites