لاکھ پردے سے رخ انور عیاں ہو جائے گا

مرزارضا برق ؔ

لاکھ پردے سے رخ انور عیاں ہو جائے گا

مرزارضا برق ؔ

MORE BYمرزارضا برق ؔ

    لاکھ پردے سے رخ انور عیاں ہو جائے گا

    پردہ کھل جائے گا ہر پردہ کتاں ہو جائے گا

    جوہر تیغ اصالت سب عیاں ہو جائے گا

    امتحاں کے وقت اپنا امتحاں ہو جائے گا

    تو اگر اے ماہ آ نکلا کسی دن بعد مرگ

    پردۂ خاک مزار اپنا کتاں ہو جائے گا

    پیچ زلفوں کے جو کھل جائیں گے روئے یار پر

    سنبل تر آتش گل کا دھواں ہو جائے گا

    تو وہ گل رو ہے کہ تجھ کو دیکھ کر نکلے گی جان

    بلبل روح و رواں بے آشیاں ہو جائے گا

    روئے رنگیں کی حکایت نظم اگر کرنے لگیں

    برقؔ سب دیواں ہمارا بوستاں ہو جائے گا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Jashn-e-Rekhta | 2-3-4 December 2022 - Major Dhyan Chand National Stadium, Near India Gate, New Delhi

    GET YOUR FREE PASS
    بولیے