لجا لجا کے ستاروں سے مانگ بھرتی ہے

مخمور سعیدی

لجا لجا کے ستاروں سے مانگ بھرتی ہے

مخمور سعیدی

MORE BYمخمور سعیدی

    لجا لجا کے ستاروں سے مانگ بھرتی ہے

    عروس شام یہ کس کے لیے سنورتی ہے

    وہ اپنی شوخی رفتار ناز میں گم ہے

    اسے خبر ہی کہاں کس پہ کیا گزرتی ہے

    جواب اس کے سوالوں کا دے کوئی کب تک

    یہ زندگی تو مسلسل سوال کرتی ہے

    اس آرزو نے ہمیں بھی کیا اسیر اپنا

    وہ آرزو جو سدا دل میں گھٹ کے مرتی ہے

    اب آ گئے ہو تو ٹھہرو خرابۂ دل میں

    یہ وہ جگہ ہے جہاں زندگی سنورتی ہے

    یہ چھٹنے والے ہیں بادل جو کالے کالے ہیں

    اسی فضا میں وہ روشن دھنک نکھرتی ہے

    کوئی پڑاؤ نہیں اس سفر میں اے مخمورؔ

    جو چل پڑے تو ہوا پھر کہاں ٹھہرتی ہے

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    لجا لجا کے ستاروں سے مانگ بھرتی ہے نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY