لمحوں کو اداسی میں سمونا نہیں اچھا

جاوید منظر

لمحوں کو اداسی میں سمونا نہیں اچھا

جاوید منظر

MORE BYجاوید منظر

    لمحوں کو اداسی میں سمونا نہیں اچھا

    تقدیر بگڑ جائے تو رونا نہیں اچھا

    ہر ایک کو ہر رخ سے حقیقت نظر آئے

    اس گھر میں کوئی ایسا کھلونا نہیں اچھا

    جو لوگ سدا ظلم کے کانٹوں پہ پلے ہیں

    ان کے لئے پھولوں کا بچھونا نہیں اچھا

    پہلے بھی بہت اشک سنبھالے تھے مگر آج

    موتی وہ ملے ہیں کہ پرونا نہیں اچھا

    منظرؔ بھی نفاست کے علم دار تھے لیکن

    اب خون کے ان داغوں کو دھونا نہیں اچھا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY