لمس بیتے لمحوں کا گدگدا رہا ہوگا

حیات وارثی

لمس بیتے لمحوں کا گدگدا رہا ہوگا

حیات وارثی

MORE BYحیات وارثی

    لمس بیتے لمحوں کا گدگدا رہا ہوگا

    غنچہ بے خیالی میں مسکرا دیا ہوگا

    میرا تذکرہ جب بھی غیر سے سنا ہوگا

    خود تمہارے چہرے کا رنگ اڑ گیا ہوگا

    جس کو کہہ کے دیوانہ مارتے تھے پتھر سے

    اس کے ہاتھ میں شاید آئینہ رہا ہوگا

    ہے تمہارے چہرے پر کیوں حجاب کی شبنم

    اپنے آپ کو ہم نے بے وفا کہا ہوگا

    اس کے بعد تم خود کو پہروں ڈھونڈھتے ہو گے

    جب کوئی پتہ میرا تم سے پوچھتا ہوگا

    دیکھتے ہو حیرت سے کیوں حیات کا دامن

    مصلحت کے کانٹوں سے یہ الجھ گیا ہوگا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے