لیے میں قدم جو اس کے تو کیا عتاب الٹا

فخر الدین خاں ماہر

لیے میں قدم جو اس کے تو کیا عتاب الٹا

فخر الدین خاں ماہر

MORE BYفخر الدین خاں ماہر

    لیے میں قدم جو اس کے تو کیا عتاب الٹا

    کہی بات میں نے سیدھی تو دیا جواب الٹا

    وہ جو غیر ہیں سو ان سے تمہیں بے تکلفی ہے

    ہمیں دیکھ کر کے اب تم کرو ہو حجاب الٹا

    یہ وہ دور ہے عزیزو ہے نجیب گردی اس میں

    چلی باد اب وہ جس سے ورق کتاب الٹا

    وہیں مہر ذرہ ہو کر لگا آنکھ کو جھپکنے

    لب بام ان نے رخ سے جو سحر نقاب الٹا

    میں تلاش میں کل اس کے پھرا در بدر وہ ماہرؔ

    نہ ملا تو گھر کو اپنے میں پھرا خراب الٹا

    مآخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY