لوگ کہتے ہیں محبت میں اثر ہوتا ہے

مصحفی غلام ہمدانی

لوگ کہتے ہیں محبت میں اثر ہوتا ہے

مصحفی غلام ہمدانی

MORE BYمصحفی غلام ہمدانی

    لوگ کہتے ہیں محبت میں اثر ہوتا ہے

    کون سے شہر میں ہوتا ہے کدھر ہوتا ہے

    اس کے کوچے میں ہے نت صورت بیداد نئی

    قتل ہر خستہ بانداز دگر ہوتا ہے

    نہیں معلوم کہ ماتم ہے فلک پر کس کا

    روز کیوں چاک گریبان سحر ہوتا ہے

    ووہیں اپنی بھی ہے باریک تر از مو گردن

    تیغ کے ساتھ یہاں ذکر کمر ہوتا ہے

    کر کے میں یاد دل اپنے کو بہت روتا ہوں

    جب کسی شخص کا دنیا سے سفر ہوتا ہے

    اس کی مژگاں کا کوئی نام نہ لو کیا حاصل

    میرا ان باتوں سے سوراخ جگر ہوتا ہے

    مصحفیؔ ہم تو ترے ملنے کو آئے کئی بار

    اے دوانے تو کسی وقت بھی گھر ہوتا ہے

    مآخذ
    • کتاب : kulliyat-e-mas.hafii(awwal) (Pg. 452)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY