لوٹا ہے مجھے اس کی ہر ادا نے

وحشتؔ رضا علی کلکتوی

لوٹا ہے مجھے اس کی ہر ادا نے

وحشتؔ رضا علی کلکتوی

MORE BYوحشتؔ رضا علی کلکتوی

    لوٹا ہے مجھے اس کی ہر ادا نے

    انداز نے ناز نے حیا نے

    دونوں نے کیا ہے مجھ کو رسوا

    کچھ درد نے اور کچھ دوا نے

    بے جا ہے تری جفا کا شکوہ

    مارا مجھ کو مری وفا نے

    پوشیدہ نہیں تمہاری چالیں

    کچھ مجھ سے کہا ہے نقش پا نے

    کیوں جور کشان آسماں سے

    منہ پھیر لیا تری جفا نے

    دل کو مایوس کر دیا ہے

    بیگانہ مزاج آشنا نے

    دونوں نے بڑھائی رونق حسن

    شوخی نے کبھی کبھی حیا نے

    خوش پاتے ہیں مجھ کو دوست وحشتؔ

    دل کا احوال کون جانے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY