مدھم ہوئی تو اور نکھرتی چلی گئی

امیر امام

مدھم ہوئی تو اور نکھرتی چلی گئی

امیر امام

MORE BYامیر امام

    مدھم ہوئی تو اور نکھرتی چلی گئی

    زندہ ہے ایک یاد جو مرتی چلی گئی

    تھی زندگی کی مثل شب ہجر دوستو

    اور زندگی کی مثل گزرتی چلی گئی

    ہم سے یہاں تو کچھ بھی سمیٹا نہ جا سکا

    ہم سے ہر ایک چیز بکھرتی چلی گئی

    آئے تھے چند زخم گزرگاہ وقت پر

    گزری ہوائے وقت تو بھرتی چلی گئی

    اک اشک قہقہوں سے گزرتا چلا گیا

    اک چیخ خامشی میں اترتی چلی گئی

    ہر رنگ ایک رنگ سے ہم رنگ ہو گیا

    تصویر زندگی کی ابھرتی چلی گئی

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    امیر امام

    امیر امام

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY