محسوس لمس جس کا سر رہ گزر کیا

صابر ظفر

محسوس لمس جس کا سر رہ گزر کیا

صابر ظفر

MORE BYصابر ظفر

    محسوس لمس جس کا سر رہ گزر کیا

    سایا تھا وہ اسی کا جسے ہم سفر کیا

    کچھ بے ٹھکانہ کرتی رہیں ہجرتیں مدام

    کچھ میری وحشتوں نے مجھے در بدر کیا

    رہنا نہیں تھا ساتھ کسی کے مگر رہے

    کرنا نہیں تھا یاد کسی کو مگر کیا

    تو آئنہ بھی آپ تھا اور عکس بھی تھا آپ

    تیرے جمال ہی نے تجھے خوش نظر کیا

    وہ جس ڈگر ملے گا وہیں مر مٹوں گا میں

    تم دیکھنا سفر کا ارادہ اگر کیا

    جب زندگی گزار دی آیا ہے تب خیال

    کیوں اس کا انتظار ظفرؔ عمر بھر کیا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY