میں دل پہ جبر کروں گا تجھے بھلا دوں گا

محسن نقوی

میں دل پہ جبر کروں گا تجھے بھلا دوں گا

محسن نقوی

MORE BYمحسن نقوی

    میں دل پہ جبر کروں گا تجھے بھلا دوں گا

    مروں گا خود بھی تجھے بھی کڑی سزا دوں گا

    یہ تیرگی مرے گھر کا ہی کیوں مقدر ہو

    میں تیرے شہر کے سارے دیئے بجھا دوں گا

    ہوا کا ہاتھ بٹاؤں گا ہر تباہی میں

    ہرے شجر سے پرندے میں خود اڑا دوں گا

    وفا کروں گا کسی سوگوار چہرے سے

    پرانی قبر پہ کتبہ نیا سجا دوں گا

    اسی خیال میں گزری ہے شام درد اکثر

    کہ درد حد سے بڑھے گا تو مسکرا دوں گا

    تو آسمان کی صورت ہے گر پڑے گا کبھی

    زمیں ہوں میں بھی مگر تجھ کو آسرا دوں گا

    بڑھا رہی ہیں مرے دکھ نشانیاں تیری

    میں تیرے خط تری تصویر تک جلا دوں گا

    بہت دنوں سے مرا دل اداس ہے محسنؔ

    اس آئنے کو کوئی عکس اب نیا دوں گا

    مآخذ
    • کتاب : Kulliyat-e-mohsin (Pg. 224)
    • Author : Mohsin Naqvi
    • مطبع : Mavra Publishers (2010)
    • اشاعت : 2010

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY