میں ہوں خاموش مگر بول رہا ہے مجھ میں

منصور عثمانی

میں ہوں خاموش مگر بول رہا ہے مجھ میں

منصور عثمانی

MORE BYمنصور عثمانی

    میں ہوں خاموش مگر بول رہا ہے مجھ میں

    ایسا لگتا ہے کوئی اور چھپا ہے مجھ میں

    مجھ سے دلی کی نہیں دل کی کہانی سنئے

    شہر تو یہ بھی کئی بار لٹا ہے مجھ میں

    تجھ کو چاہت ہے وفا کی تو مجھے غور سے پڑھ

    وہ کتابوں میں کہاں ہے جو لکھا ہے مجھ میں

    مسکراتا ہوا مقتل سے گزر آیا ہوں

    زندگی تیری کوئی خاص ادا ہے مجھ میں

    یہ الگ بات کہ الفاظ ہیں میرے لیکن

    سچ تو بس یہ ہے کہ تیری ہی صدا ہے مجھ میں

    میرے شعروں سے بکھر سکتے ہیں اس کے گیسو

    تیرا انداز بھی اے باد صبا ہے مجھ میں

    لاکھ خاموش سہی ساری فضائیں منصورؔ

    بولنے والا مگر بول رہا ہے مجھ میں

    مأخذ :
    • کتاب : Kashmakash (Pg. 114)
    • Author : Mansoor Usmani
    • مطبع : Najma House, Baradari, Moradabad (2007)
    • اشاعت : 2007

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY