میں جو حاصل ترے کوچے کی گدائی کرتا

شاد عظیم آبادی

میں جو حاصل ترے کوچے کی گدائی کرتا

شاد عظیم آبادی

MORE BYشاد عظیم آبادی

    میں جو حاصل ترے کوچے کی گدائی کرتا

    بندگی کہتے ہیں کس شے کو خدائی کرتا

    ذرے ذرے کو ترے کوچے میں تھا مجھ سے غبار

    میں جو کرتا بھی تو کس کس سے صفائی کرتا

    معتکف جو ترے کوچے کے تھے اٹھتے نہ کبھی

    کعبہ خود آ کے اگر ناصیہ سائی کرتا

    سوچ ناحق ہے اسیران قفس کے دل کو

    کیا پڑی تھی جو کوئی فکر رہائی کرتا

    کانپتے ہاتھوں سے کھلتا نہ قفس اے صیاد

    کاش منظور بھی تو میری رہائی کرتا

    شادؔ دشمن کی شکایت کا وظیفہ بیکار

    کیا غرض تھی کہ مرے ساتھ بھلائی کرتا

    مآخذ
    • کتاب : Dewan-e-shad Azimabadi (Pg. 151)
    • Author : Shad Azimabadi
    • مطبع : Educational Publishing House (2005)
    • اشاعت : 2005

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY