میں جو کچھ سوچتا ہوں اب تمہیں بھی سوچنا ہوگا

حمایت علی شاعر

میں جو کچھ سوچتا ہوں اب تمہیں بھی سوچنا ہوگا

حمایت علی شاعر

MORE BYحمایت علی شاعر

    میں جو کچھ سوچتا ہوں اب تمہیں بھی سوچنا ہوگا

    جو ہوگا زندگی کا ڈھب تمہیں بھی سوچنا ہوگا

    ابھی تو آنکھ اوجھل ہے مگر خورشید کے ہاتھوں

    کھینچے گی جب ردائے شب تمہیں بھی سوچنا ہوگا

    مقدر میں تمہارے کیوں نہیں لکھا بجز میرے

    صلیب و دار کا منصب تمہیں بھی سوچنا ہوگا

    یہ کیسا قافلہ ہے جس میں سارے لوگ تنہا ہیں

    یہ کس برزخ میں ہیں ہم سب تمہیں بھی سوچنا ہوگا

    خدا اور آدمی دونوں اگر عین حقیقت ہیں

    حقیقت میں ہے کیا مذہب تمہیں بھی سوچنا ہوگا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے