میں کھل نہیں سکا کہ مجھے نم نہیں ملا

ساقی فاروقی

میں کھل نہیں سکا کہ مجھے نم نہیں ملا

ساقی فاروقی

MORE BYساقی فاروقی

    میں کھل نہیں سکا کہ مجھے نم نہیں ملا

    ساقی مرے مزاج کا موسم نہیں ملا

    مجھ میں بسی ہوئی تھی کسی اور کی مہک

    دل بجھ گیا کہ رات وہ برہم نہیں ملا

    بس اپنے سامنے ذرا آنکھیں جھکی رہیں

    ورنہ مری انا میں کہیں خم نہیں ملا

    اس سے طرح طرح کی شکایت رہی مگر

    میری طرف سے رنج اسے کم نہیں ملا

    ایک ایک کر کے لوگ بچھڑتے چلے گئے

    یہ کیا ہوا کہ وقفۂ ماتم نہیں ملا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    ساقی فاروقی

    ساقی فاروقی

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    میں کھل نہیں سکا کہ مجھے نم نہیں ملا نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY