میں نے پیالہ ابھی پیا ہی نہیں

محمد اسد اللہ

میں نے پیالہ ابھی پیا ہی نہیں

محمد اسد اللہ

MORE BYمحمد اسد اللہ

    میں نے پیالہ ابھی پیا ہی نہیں

    ایسا لگتا ہے میں جیا ہی نہیں

    عمر زنجیر اک حوادث کی

    سانس تو لی ہے دم لیا ہی نہیں

    ہر قدم پر ہے اک نیا رستہ

    اس گلی میں تو راستہ ہی نہیں

    منزلیں راستے قدم آنکھیں

    سب اندھیرے میں ہیں دیا ہی نہیں

    کیسی مشکل زمین کا ہے سفر

    ہے ردیف اور قافیہ ہی نہیں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY