میں پھر سے ہو جاؤں گا تنہا اک دن

ساقی فاروقی

میں پھر سے ہو جاؤں گا تنہا اک دن

ساقی فاروقی

MORE BY ساقی فاروقی

    میں پھر سے ہو جاؤں گا تنہا اک دن

    بین کرے گا روح کا سناٹا اک دن

    جن میں ابھی اک وحشی آگ کے سائے ہیں

    وہ آنکھیں ہو جائیں گی صحرا اک دن

    بیت چکا ہوگا یہ خوابوں کا موسم

    بند ملے گا نیند کا دروازہ اک دن

    مٹ جائے گا سحر تمہاری آنکھوں کا

    اپنے پاس بلا لے گی دنیا اک دن

    ڈوب رہا ہوں جھوٹ اور کھوٹ کے دریا میں

    جانے کہاں لے جائے یہ دریا اک دن

    میں بھی لوٹ آؤں گا اپنے تعاقب سے

    تم بھی مجھ کو ڈھونڈ کے تھک جانا اک دن

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY

    Added to your favorites

    Removed from your favorites