میں تیری آنکھ میں رہ کر حجاب ہو جاؤں

طاہر حنفی

میں تیری آنکھ میں رہ کر حجاب ہو جاؤں

طاہر حنفی

MORE BYطاہر حنفی

    میں تیری آنکھ میں رہ کر حجاب ہو جاؤں

    تو حرف حرف پڑھے وہ کتاب ہو جاؤں

    مرے سوا کبھی تجھ کو لبھا سکے نہ کوئی

    میں تیرے واسطے وہ انتخاب ہو جاؤں

    تو آسمان کی وسعت میں لے کے جائے مجھے

    میں تجھ پہ فخر کروں آفتاب ہو جاؤں

    تو بوند بوند سے لذت کشید کرتا رہے

    مگر نہ پیاس بجھے وہ شراب ہو جاؤں

    وہ اپنی نرم سی پوروں سے گر چھوئے مجھ کو

    مہک مہک اٹھوں مثل گلاب ہو جاؤں

    تمہاری یاد میں چھوڑوں نہ مے کشی طاہرؔ

    مجھے ہے جتنا بھی ہونا خراب ہو جاؤں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY