میں تجھ سے لاکھ بچھڑ کر یہاں وہاں جاتا

سلمان اختر

میں تجھ سے لاکھ بچھڑ کر یہاں وہاں جاتا

سلمان اختر

MORE BYسلمان اختر

    میں تجھ سے لاکھ بچھڑ کر یہاں وہاں جاتا

    مری جبین سے سجدوں کا کب نشاں جاتا

    زمین مجھ کو سمجھتی نہ آسماں کوئی

    گناہ گار ہی کہلاتا میں جہاں جاتا

    نصیب سے تو ملے تھے فقط یہ خالی ہاتھ

    فراخ دل وہ نہ ہوتا تو میں کہاں جاتا

    مجھے خبر نہ تھی اس گھر میں کتنے کمرے ہیں

    میں کیسے لے کے وہاں ساری داستاں جاتا

    میں ایک گونج کی مانند لوٹتا اس تک

    جہاں سے مجھ کو بلاتا میں بس وہاں جاتا

    مأخذ :
    • کتاب : Soch Samajh (Pg. 20)
    • Author : Salman Akhtar
    • مطبع : Star Publishers Pvt.Ltd, N. Delhi (2015)
    • اشاعت : 2015

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY