من بھی شاعر کی طرح تن بھی غزل جیسا ہے

قیصر صدیقی

من بھی شاعر کی طرح تن بھی غزل جیسا ہے

قیصر صدیقی

MORE BYقیصر صدیقی

    من بھی شاعر کی طرح تن بھی غزل جیسا ہے

    یہ ترے روپ کا درپن بھی غزل جیسا ہے

    ریشمی چوڑیاں ایسی کہ غزل کے مصرعے

    یہ کھنکتا ہوا کنگن بھی غزل جیسا ہے

    ان لچکتی ہوئی زلفوں میں ہے گوکل کا سماں

    یہ مہکتا ہوا ساون بھی غزل جیسا ہے

    لوگ گیتوں کی طرح تو بھی رسیلی ہے مگر

    میری سجنی ترا ساجن بھی غزل جیسا ہے

    میرے جذبات کی شوخی بھی غزل جیسی ہے

    میرے احساس کا بچپن بھی غزل جیسا ہے

    دیکھ کر تجھ کو غزل کیسے نہ لکھے قیصرؔ

    تو غزل جیسی ہے یوون بھی غزل جیسا ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY