مرکز دہر ذات میری ہے

رحمان جامی

مرکز دہر ذات میری ہے

رحمان جامی

MORE BYرحمان جامی

    مرکز دہر ذات میری ہے

    رشک دنیا حیات میری ہے

    یہ زمیں یہ فلک یہ بحر و بر

    یہ حسیں کائنات میری ہے

    میری خاطر نکلتا ہے سورج

    دن ہے میرا یہ رات میری ہے

    ورق گل پہ شعر ہیں میرے

    بات بھی پات پات میری ہے

    سچ کی صورت کہی ہے جس نے بھی

    سچ تو یہ ہے وہ بات میری ہے

    کیا ہوا اگر نہیں مرا قبضہ

    پھر بھی کل کائنات میری ہے

    تیری قسمت ہو یا مری جامیؔ

    جو بھی ہے تیرے ساتھ میری ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY