مرتا بھلا ہے ضبط کی طاقت اگر نہ ہو

حکیم محمد اجمل خاں شیدا

مرتا بھلا ہے ضبط کی طاقت اگر نہ ہو

حکیم محمد اجمل خاں شیدا

MORE BYحکیم محمد اجمل خاں شیدا

    مرتا بھلا ہے ضبط کی طاقت اگر نہ ہو

    کتنا ہی درد دل ہو مگر چشم تر نہ ہو

    وہ سر ہی کیا کہ جس میں تمہارا نہ ہو خیال

    وہ دل ہی کیا کہ جس میں تمہارا گزر نہ ہو

    ایسی تو بے اثر نہیں بیتابئ فراق

    نالے کروں میں اور کسی کو خبر نہ ہو

    مل جاؤ تم تو شب کو بڑھا لیں گے تا ابد

    مانگیں گے یہ دعا کہ الٰہی سحر نہ ہو

    زلف ان کی اپنے رخ پہ پریشاں کریں گے ہم

    ڈر ہے شب وصال کہیں مختصر نہ ہو

    میں ہوں وہ تفتہ دل کی ہوا آفتاب پر

    میرا گماں کہ آہ کا میری شرر نہ ہو

    شیداؔ کو تیرے خوف کسی کا نہیں یہاں

    سارا جہاں ہو اس کا عدو تو مگر نہ ہو

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY