مست ہوں متقی نہیں ہوں میں

یونس تحسین

مست ہوں متقی نہیں ہوں میں

یونس تحسین

MORE BYیونس تحسین

    مست ہوں متقی نہیں ہوں میں

    کام کا آدمی نہیں ہوں میں

    مجھ کو دنیا کی فکر لاحق ہے

    یعنی کوئی ولی نہیں ہوں میں

    تیرے معیار کا تو دور کی بات

    تیرے مطلب کا بھی نہیں ہوں میں

    مذہب عشق کا پیمبر ہوں

    ہاں مگر آخری نہیں ہوں میں

    ڈر نہیں پاس آ مرے پیارے

    نور ہوں روشنی نہیں ہوں میں

    مقتدیٰ ہوں میں روز اول سے

    کافرا! مقتدی نہیں ہوں میں

    عام سے کوزہ گر کا بیٹا ہوں

    گاؤں کا چودھری نہیں ہوں میں

    مجھ پہ تھوڑا سا غور کر تحسینؔ

    ہوں تو پھر عارضی نہیں ہوں میں

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY