مزے کے ساتھ گزرا ہوں محبت کی منازل سے (ردیف .. ا)

آرزو سہارنپوری

مزے کے ساتھ گزرا ہوں محبت کی منازل سے (ردیف .. ا)

آرزو سہارنپوری

MORE BYآرزو سہارنپوری

    مزے کے ساتھ گزرا ہوں محبت کی منازل سے

    کبھی اپنا مقام آیا کبھی ان کا مقام آیا

    وہ لمحہ بھی کسی کی انجمن میں کیا قیامت تھا

    نگاہوں کی زباں میں دل کو جب دل کا پیام آیا

    یکایک اور دل کی دھڑکنوں کا تیز ہو جانا

    سنبھل اے عشق پھر شاید کوئی نازک مقام آیا

    شگفت دل ہی کے دم تک تھی رنگ و بو کی دنیا بھی

    نہ پھر کوئی کلی چٹکی نہ پھر کوئی پیام آیا

    بدل کر رہ گئیں اے آرزو قسمت کی تحریریں

    یہ کس کے دست نازک سے مرے ہاتھوں میں جام آیا

    مأخذ :

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY