مہرباں ہو کے بلا لو مجھے چاہو جس وقت (ردیف .. ن)

مرزا غالب

مہرباں ہو کے بلا لو مجھے چاہو جس وقت (ردیف .. ن)

مرزا غالب

MORE BYمرزا غالب

    مہرباں ہو کے بلا لو مجھے چاہو جس وقت

    میں گیا وقت نہیں ہوں کہ پھر آ بھی نہ سکوں

    ضعف میں طعنہ اغیار کا شکوہ کیا ہے

    بات کچھ سر تو نہیں ہے کہ اٹھا بھی نہ سکوں

    زہر ملتا ہی نہیں مجھ کو ستم گر ورنہ

    کیا قسم ہے ترے ملنے کی کہ کھا بھی نہ سکوں

    اس قدر ضبط کہاں ہے کبھی آ بھی نہ سکوں

    ستم اتنا تو نہ کیجے کہ اٹھا بھی نہ سکوں

    لگ گئی آگ اگر گھر کو تو اندیشہ کیا

    شعلۂ دل تو نہیں ہے کہ بجھا بھی نہ سکوں

    تم نہ آؤ گے تو مرنے کی ہیں سو تدبیریں

    موت کچھ تم تو نہیں ہو کہ بلا بھی نہ سکوں

    ہنس کے بلوائیے مٹ جائے گا سب دل کا گلہ

    کیا تصور ہے تمہارا کہ مٹا بھی نہ سکوں

    مأخذ :
    • کتاب : Ghair Mutdavil Kalam-e-Ghalib (Pg. 76)
    • Author : Jamal Abdul Wahid
    • مطبع : Ghalib Academy Basti Hazrat Nizamuddin,New Delhi-13 (2016)
    • اشاعت : 2016
    • کتاب : Deewan-e-Ghalib Jadeed (Al-Maroof Ba Nuskha-e-Hameedia) (Pg. 276)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY