میرا دل ناشاد جو ناشاد رہے گا

فرحت کانپوری

میرا دل ناشاد جو ناشاد رہے گا

فرحت کانپوری

MORE BYفرحت کانپوری

    میرا دل ناشاد جو ناشاد رہے گا

    عالم دل برباد کا برباد رہے گا

    تا دیر جو ہنگامۂ فریاد رہے گا

    شک ہے کہ کہیں عالم ایجاد رہے گا

    پابندئ اقدار میں آزاد رہے گا

    لیکن یہ ترا جور و ستم یاد رہے گا

    دل اپنے ہی ہاتھوں سے جو برباد رہے گا

    افسانۂ ناکامئ فریاد رہے گا

    دل سست تو لب تشنۂ فریاد رہے گا

    اب فرحت ناشاد تو ناشاد رہے گا

    دل محو چمن ہے تو نگاہوں میں چمن ہے

    پابند قفس ہو کے بھی آزاد رہے گا

    غیروں کا کرم راس نہ آئے گا نہ آیا

    عالم دل برباد کا برباد رہے گا

    فرحتؔ ترے نغموں کی وہ شہرت ہے جہاں میں

    واللہ ترا رنگ سخن یاد رہے گا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY