میرا قرضہ ادا کرے کوئی

خالد ملک ساحل

میرا قرضہ ادا کرے کوئی

خالد ملک ساحل

MORE BYخالد ملک ساحل

    میرا قرضہ ادا کرے کوئی

    تاک میں ہوں خطا کرے کوئی

    گونج کی لہر سے نکل جاؤں

    میں کہوں تو سنا کرے کوئی

    کس کو طاقت ہے مسکرانے کی

    بے وفا سے وفا کرے کوئی

    اپنا احساس ہو رہا ہے مجھے

    مجھ سے مجھ کو جدا کرے کوئی

    یہ زمیں آسماں نہیں ساحلؔ

    کس قدر حوصلہ کرے کوئی

    مأخذ :
    • کتاب : اردو غزل کا مغربی دریچہ(یورپ اور امریکہ کی اردو غزل کا پہلا معتبر ترین انتخاب) (Pg. 557)
    • مطبع : کتاب سرائے بیت الحکمت لاہور کا اشاعتی ادارہ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY