میرے دل کو اس طرح لگتا تمہارا بوجھ ہے

خان جانباز

میرے دل کو اس طرح لگتا تمہارا بوجھ ہے

خان جانباز

MORE BYخان جانباز

    میرے دل کو اس طرح لگتا تمہارا بوجھ ہے

    جس طرح بے نور آنکھوں کو نظارہ بوجھ ہے

    ہم کو کیا مطلب حسیں ہوگی تو ہوگی عمر یہ

    ہم یتیموں کے لیے بچپن ہمارا بوجھ ہے

    دونوں کندھے جھک گئے اٹھرہ برس کی عمر میں

    مجھ اکیلی جان پر سارے کا سارا بوجھ ہے

    آسمانوں پر بھی رائج ہے زمیں جیسا نظام

    دیکھ اوپر آج کل کوئی ستارہ بوجھ ہے

    سر پہ پھرتی ہے لئے وہ اپنے پہلے عشق کو

    کتنی پیاری لڑکی ہے اور کتنا پیارا بوجھ ہے

    سر پہ میرے پہلے سے تھیں گھر کی ذمہ داریاں

    اور اب یہ عشق یارو کتنا سارا بوجھ ہے

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY