میری ایذا میں خوشی جب آپ کی پاتے ہیں لوگ

رنگیں سعادت یار خاں

میری ایذا میں خوشی جب آپ کی پاتے ہیں لوگ

رنگیں سعادت یار خاں

MORE BYرنگیں سعادت یار خاں

    میری ایذا میں خوشی جب آپ کی پاتے ہیں لوگ

    تو مجھے کس کس طرح سے آ کے دھمکاتے ہیں لوگ

    ہاتھ کیا آتا ہے ان کے کچھ نہیں معلوم کیوں

    مجھ کو تم سے اور تم کو مجھ سے چھڑوانے ہیں لوگ

    ایک تو کچھ جی ہی جی میں رک رہے ہیں مجھ سے وہ

    دوسرے جا جا کے ان کو اور بھڑکاتے ہیں لوگ

    میرے ان کے صلح از بس خلق کو ہے ناگوار

    وہ تو ہیں کچھ سرد لیکن ان کو گرماتے ہیں لوگ

    رات اور دن سوچ رہتا یہی رنگیںؔ مجھے

    میں تو سب سے راست ہوں کیوں مجھ سے بل کھاتے ہیں لوگ

    مأخذ :
    • کتاب : intekhaab-e-sukhan(avval) (Pg. 69)

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY