میری قسمت سے قفس کا یا تو در کھلتا نہیں

سحر عشق آبادی

میری قسمت سے قفس کا یا تو در کھلتا نہیں

سحر عشق آبادی

MORE BYسحر عشق آبادی

    میری قسمت سے قفس کا یا تو در کھلتا نہیں

    در جو کھلتا ہے تو بند بال و پر کھلتا نہیں

    آہ کرتا ہوں تو آتی ہے پلٹ کر یہ صدا

    عاشقوں کے واسطے باب اثر کھلتا نہیں

    ایک ہم ہیں رات بھر کروٹ بدلتے ہی کٹی

    ایک وہ ہیں دن چڑھے تک جن کا در کھلتا نہیں

    رفتہ رفتہ ہی نقاب اٹھے گی روئے حسن سے

    وہ تو وہ ہے ایک دم کوئی بشر کھلتا نہیں

    RECITATIONS

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    نعمان شوق

    میری قسمت سے قفس کا یا تو در کھلتا نہیں نعمان شوق

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY