میری سوچ مجھے کس رتبے پر لے آئی

مظفر وارثی

میری سوچ مجھے کس رتبے پر لے آئی

مظفر وارثی

MORE BYمظفر وارثی

    میری سوچ مجھے کس رتبے پر لے آئی

    دائرۂ ہستی اک نقطے پر لے آئی

    جب دنیا کو میں نے کور نظر ٹھہرایا

    میری آنکھیں اپنے چہرے پر لے آئی

    میں تو اک سیدھی پگڈنڈی پر نکلا تھا

    پگڈنڈی مجھ کو چوراہے پر لے آئی

    یوں محسوس ہوا اپنی گہرائی میں جا کر

    جیسے کوئی موج کنارے پر لے آئی

    صحرا میں بھی دیواریں سی پھاند رہا ہوں

    بینائی کس اندھے رستے پر لے آئی

    میں نے نوچ کے پھینکیں جو شکنیں چادر سے

    وہ سب شکنیں دنیا ماتھے پر لے آئی

    کاہکشاں کے خواب مظفرؔ دیکھ رہا تھا

    اور بیداری ریت کے ٹیلے پر لے آئی

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY