ملا رہا ہوں ترا حسن کائنات کے ساتھ

فیضان ہاشمی

ملا رہا ہوں ترا حسن کائنات کے ساتھ

فیضان ہاشمی

MORE BYفیضان ہاشمی

    ملا رہا ہوں ترا حسن کائنات کے ساتھ

    فیزکس کھول کے بیٹھا ہوں دینیات کے ساتھ

    یہ پوسٹر تو بھلا ہے مگر پڑھے لکھو

    ذرا سا دل بھی تو رکھو قلم دوات کے ساتھ

    یہ عشق ایک دیا ہر طرف دکھاتا ہے

    میں جی رہا ہوں تواتر سے معجزات کے ساتھ

    بہت قدیم نہیں کل کا واقعہ ہے یہ

    میں اس زمین پہ اترا تھا تیری ذات کے ساتھ

    گزر رہا ہوں کسی دل نشیں سرائے سے

    ملا رہا ہوں میں خوابوں کو واقعات کے ساتھ

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY