ملے گی شیخ کو جنت، ہمیں دوزخ عطا ہوگا

ہری چند اختر

ملے گی شیخ کو جنت، ہمیں دوزخ عطا ہوگا

ہری چند اختر

MORE BYہری چند اختر

    دلچسپ معلومات

    ایک صاحب نے مشفق خواجہ کو ہری چند اختر کا یہ مطلع سنایا جس میں انھوں نے دوزخ کو مذکر باندھا ہوا ہے ۔خواجہ صاحب سے پوچھا گیا کہ دوزخ مذکر ہے یا مونث؟ بولے ہر دو صورتوں میں اس سے پناہ مانگنا چاہیے ۔۔پھر ہنستے ہوئے کہا میرا خیال ہے ''مونث'' ہے ۔کیوں کہ لوگ اس کے عذاب سے واقف ہوتے ہوئے بھی اس کے حصول میں لگے رہتے ہیں ۔۔۔

    ملے گی شیخ کو جنت، ہمیں دوزخ عطا ہوگا

    بس اتنی بات ہے جس کے لیے محشر بپا ہوگا

    رہے دو دو فرشتے ساتھ اب انصاف کیا ہوگا

    کسی نے کچھ لکھا ہوگا کسی نے کچھ لکھا ہوگا

    بروز حشر حاکم قادر مطلق خدا ہوگا

    فرشتوں کے لکھے اور شیخ کی باتوں سے کیا ہوگا

    تری دنیا میں صبر و شکر سے ہم نے بسر کر لی

    تری دنیا سے بڑھ کر بھی ترے دوزخ میں کیا ہوگا

    سکون مستقل دل بے تمنا شیخ کی صحبت

    یہ جنت ہے تو اس جنت سے دوزخ کیا برا ہوگا

    مرے اشعار پر خاموش ہے جز بز نہیں ہوتا

    یہ واعظ واعظوں میں کچھ حقیقت آشنا ہوگا

    بھروسہ کس قدر ہے تجھ کو اخترؔ اس کی رحمت پر

    اگر وہ شیخ صاحب کا خدا نکلا تو کیا ہوگا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    راحیل فاروق

    راحیل فاروق

    مأخذ :
    • کتاب : sheerazah (Pg. 24)
    • Author : makhmoor saeedi,Parem Gopal Mittal
    • مطبع : P -K Publication 3072 Partap stareet gola Market -Daryaganj delhi-6 (1973)
    • اشاعت : 1973

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY
    بولیے