مرا ہی پر سکوں چہرا بہت تھا

ملک زادہ منظور احمد

مرا ہی پر سکوں چہرا بہت تھا

ملک زادہ منظور احمد

MORE BY ملک زادہ منظور احمد

    مرا ہی پر سکوں چہرا بہت تھا

    میں اپنے آپ میں بکھرا بہت تھا

    بہت تھی تشنگی دریا بہت تھا

    سرابوں سے ڈھکا صحرا بہت تھا

    سلامت تھا وہاں بھی میرا داماں

    بہاروں کا جہاں چرچا بہت تھا

    انہیں ٹھہرے سمندر نے ڈبویا

    جنہیں طوفاں کا اندازا بہت تھا

    اڑاتا خاک کیا میں دشت و در کی

    مرے اندر مرا صحرا بہت تھا

    زمیں قدموں تلے نیچی بہت تھی

    سروں پر آسماں اونچا بہت تھا

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY