مری بیاض کو شعروں سے تم سجا دینا

شائستہ یوسف

مری بیاض کو شعروں سے تم سجا دینا

شائستہ یوسف

MORE BYشائستہ یوسف

    مری بیاض کو شعروں سے تم سجا دینا

    میں ایک وہم ہوں مجھ کو یقیں بنا دینا

    بنا کے کوئی کہانی ہماری ہستی کی

    ندی میں کاغذی کشتی کوئی بہا دینا

    بہت سنبھال کے رکھا ہے میں نے پھولوں کو

    جو ہو سکے انہیں گلدان میں سجا دینا

    چلا گیا جو کبھی لوٹ کر نہیں آیا

    میں لوٹ آؤں گی مجھ کو ذرا صدا دینا

    اندھیرا ڈھونڈھتا رہتا ہے میری پرچھائیں

    جلے چراغ تو چادر مجھے اوڑھا دینا

    کتابیں سو نہیں پائیں گی میرے بعد کبھی

    ہوا تو آ کے انہیں لوریاں سنا دینا

    بکھر کے رہ گئی ذرات غم میں شائستہؔ

    ترے قلم سے نئی شکل اک بنا دینا

    ویڈیو
    This video is playing from YouTube

    Videos
    This video is playing from YouTube

    شائستہ یوسف

    شائستہ یوسف

    RECITATIONS

    شائستہ یوسف

    شائستہ یوسف

    شائستہ یوسف

    مری بیاض کو شعروں سے تم سجا دینا شائستہ یوسف

    Additional information available

    Click on the INTERESTING button to view additional information associated with this sher.

    OKAY

    About this sher

    Lorem ipsum dolor sit amet, consectetur adipiscing elit. Morbi volutpat porttitor tortor, varius dignissim.

    Close

    rare Unpublished content

    This ghazal contains ashaar not published in the public domain. These are marked by a red line on the left.

    OKAY